کن لیڈروں کی سیٹوں پر ضمنی الیکشن ہوگا؟

جنرل الیکشن 202 میں جو رہنما دو یا زائد سیٹوں پر کامیاب ہوئے ہیں قانون کے مطابق انہیں حلف اٹھانے سے قبل ایک نشست رکھ کر زائد نشستیں چھوڑنا ہوں گی، اس ضمن میں حکومت سازی کی پلاننگ بھی انتہائی اہم شکل اختیار کر گئی ہے، صوبائی اسمبلی پنجاب میں نون لیگ کو واضح اکثریت حاصل ہو چکی ہے جبکہ قومی اسمبلی میں ایک ایک سیٹ انتہائی اہم ہے ان حالات میں زیادہ چانسز یہی ہیں کہ صوبائی اسمبلی کی سیٹیں چھوڑی جائیں گی مگر اس کے لیے بھی نون لیگ کو قومی اور صوبائی اسمبلی میں لیڈرشپ کے توازن اور حکومت سازی کی پلاننگ کا خیال رکھنا ہوگا۔

شہباز شریف دو قومی ایک صوبائی، حمزہ شہباز ایک قومی ایک صوبائی، مریم نواز ایک قومی ایک صوبائی، رانا تنویر ایک قومی ایک صوبائی،
احسن اقبال ایک قومی ایک صوبائی، سردار اویس لغاری ایک قومی ایک صوبائی، سردار غلام عباس ایک قومی ایک صوبائی، علیم خان ایک قومی ایک صوبائی، جام کمال خان ایک قومی ایک صوبائی
پر کامیاب ہوئے ہیں کامیابی کا سرکاری نوٹیفیکیشن جاری ہونے کہ بعد ایک نشست رکھ کر باقی نشستیں چھوڑنے کے پابند ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.