حکومتی سرپرستی، بھارت جانے والی پاکستانی خاتون سیما حیدر کو بالی ووڈ میں کام کی پیشکش

بھارت جانے والی پاکستانی خاتون سیما حیدر کو بالی ووڈ کے ایک غیر معروف پروڈیوسر نے فلم میں کام کرنے کی پیشکش کردی ہے۔

بھارت کے نشریاتی ادارے ڈی این اے انڈیا کی رپورٹ کے مطابق ریاست اترپردیش کے رہائشی فلم ساز امت جانی نے سیما حیدر کو فلم میں کام کرنے کی پیش کی ہے۔

میڈیا رپورٹ کے مطابق امت جانی کا ممبئی میں اپنا پروڈکش ہاؤس ہے جس میں وہ چھوٹے بجٹ کی فلمیں بناتے ہیں، ڈرامے، گانے اور سیریز بھی تیار کرتے ہیں۔

سیما حیدر کو فلم میں کام کرنے کی پیش کی ویڈیو سماجی رابطوں کی ویب سائٹس پر وائرل ہوئی تو اس پر صارفین کی جانب سے مختلف آرا کا اظہار کیا جا رہا ہے۔

واضح رہے کہ کراچی کی رہائشی سیما حیدر اپنے چار بچوں سمیت نیپال کے راستے بھارت پہنچی تھیں جہاں انہوں نے ہندو رسومات کے تحت سچن مینا سے شادی کر لی جب کہ ان کے پاکستانی خاوند غلام حیدر جکھرانی سعودی عرب میں ملازمت کے لیے مقیم ہیں۔

فلم پروڈیوسر کی وائرل ہونے والی ویڈیو میں انہوں نے بتایا ہے کہ سیما حیدر کے غیر قانونی طور پر بھارت داخلے کی سپورٹ نہیں کی جا سکتی ہے لیکن ان کی مالی مشکلات کو کم کرنے کے لیے انہیں فلم میں کام کرنے کی پیش کش کی گئی ہے۔

اس ضمن میں انہوں نے بتایا ہے کہ وہ مظاہروں میں ہلاک ہونے والے ایک شخص کی زندگی پر فلم بنا رہے ہیں جس میں سیما حیدر کو کام کی پیش کش کی گئی ہے۔

میڈیا رپورٹ کے مطابق سیما حیدر کی بھی ایک ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی ہے جس میں انہوں نے کہا ہے کہ انہیں امت جانی نے فلم میں کام کی پیش کش کی ہے۔

سیما حیدر کے مطابق ابھی وہ پریشان ہیں، بہت سارے معاملات میں پھنسی ہوئی ہیں لیکن جیسے ہی وہ آزاد ہوں گی تو اسکرپٹ پڑھ کر فلم میں کام کریں گی۔

واضح رہے کہ سیما حیدر کے بھارت میں غیر قانونی طور پر داخل ہونے پر ان کے خلاف تحقیقات جاری ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

2 تبصرے “حکومتی سرپرستی، بھارت جانے والی پاکستانی خاتون سیما حیدر کو بالی ووڈ میں کام کی پیشکش

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.